بشریٰ بی بی کے بھائی سمیت 18 افراد اینٹی کرپشن میں طلب

سرکاری اراضی پر غیر قانونی قبضے کے سلسلے میں اینٹی کرپشن پنجاب نے دیبالپورمیں سابق وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کے بھائی سمیت 18 افراد کو طلب کرلیا۔
بشریٰ بی بی کے بھائی احمد مجتبیٰ اور دیگر 18 افراد کو اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ساہیوال کے دفتر میں 6 جولائی کو سرکاری اراضی سے متعلق کرپشن اسکینڈل میں ملوث ہونے کے الزام میں تحقیقات کے سلسلے میں پیش ہونے کی ہدایت کی گئی ہے، ساتھ ہی اے سی ای نے یہ بھی ہدایت کی کہ تحقیقات میں شامل نہ ہونے والے افراد کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔
ایک اے سی ای عہدیدار نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ احمد مجتبیٰ اور دیگر پر دیبالپور میں سرکاری اراضی پر قبضہ کرنے کا الزام ہے، ذرائع نے دعویٰ کیا کہ احمد مجتبیٰ مارکیٹ کے قیام کے لیے مختص سرکاری اراضی کو غیر قانونی طور پر لیز پر دینے اور مارکیٹ کمیٹی کے چیئرمین کے ذریعے سرکاری زمین پر قبضہ کرنے میں ملوث ہے جس سے قومی خزانے کو 20 کروڑ روپے کا نقصان پہنچا۔
اینٹی کرپشن حکام کے مطابق سرکاری اراضی پر قبضہ کر کے دیبالپور میں دکانیں تعمیر کی گئیں۔ گزشتہ ہفتے اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ نے بشریٰ بی بی کی قریبی دوست فرحت شہزادی المعروف فرح خان کی کمپنی کو 10 ایکڑ کے 2 پلاٹس کی غیر قانونی الاٹمنٹ کے کیس میں فرح خان اور ان کی والدہ کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔
اس سلسلے میں فیصل آباد انڈسٹریل اسٹیٹ ڈیولپمنٹ اور منیجمنٹ کمپنی (ایف آئی ای ڈی ایم سی) کے سی ای او اور اسپیشل اکنامک زون کمیٹی کے سیکریٹری کے سیکریٹی کو گرفتار کیا تھا۔ اس سلسلے میں درج مقدمے کے مطابق ایف آئی ای ڈی ایم سی کے حکام کی ملی بھگت سے ایم/ایس المعیز ڈیری اینڈ فوڈز پرائیویٹ لمیٹڈ کو پلاٹوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ کے الزامات کی تحقیقات شروع کی گئی ہیں۔

Related Articles

Back to top button