سیالکوٹ پی ٹی آئی جلسہ، پولیس کی شیلنگ، جلسہ گاہ خالی کرا دی

پی ٹی آئی آج سیالکوٹ میں جلسہ کر رہی ہے جس کی ضلعی انتظامیہ نے اجازت دینے سے انکار کر دیا، پولیس نے جلسہ گاہ پر کریک ڈاؤن کر کے سٹیج بنانے کیلئے لایا گیا سامان ہٹا دیا، پولیس کی جانب سے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کے شیل چلائے گئے جس کے بعد تحریک انصاف کے کارکن منتشر ہو گئے۔

ضلعی انتظامیہ کا موقف ہے کہ سیالکوٹ کی مسیحی براداری سی ٹی آئی گراؤنڈ میں جلسے کی کال کے خلاف احتجاج کر رہی ہے، سیالکوٹ کے ڈپٹی کمشنر عمران قریشی نے جلسہ گاہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ پرائیویٹ جگہ پر جلسہ کرنے کی اجازت نہیں دے سکتے جبکہ گرفتاریوں کے بارے میں ڈی پی او سے پوچھ کر بتا سکتا ہوں۔

سیالکوٹ کے ڈسٹرکٹ پولیس افسر (ڈی پی او) نے بتایا کہ ہائیکورٹ کا حکم ہے کہ مسیحی برادری کی جگہ پر جلسے کو روکیں۔ڈی پی او کے مطابق عبادت گاہ کے سامنے زبردستی جلسے کی اجازت نہیں دے سکتے، اس کے لیے متبادل جگہ فراہم کی جا سکتی ہے۔ کسی سیاسی کارکن کو حراست میں نہیں لیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف سی ٹی آئی گراؤنڈ کے علاوہ کسی اور جگہ جلسے کی اجازت حاصل کرنے کے لیے درخواست دے۔جلسہ گاہ سے سامان ہٹانے جانے کے دوران پی ٹی آئی کے کارکنوں نے مزاحمت کی جس پر پولیس نے آنسو گیس کے شیل فائر کیے۔پی ٹی آئی کے مقامی رہنما عثمان ڈار نے کہا کہ پرامن جلسہ ان کا حق ہے اور عمران خان سیالکوٹ ضرور آئیں گے۔

Related Articles

Back to top button