قومی معاملات میں نرم یا سخت مداخلت ہرگزقبول نہیں

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے سربراہ اور جمعیت علمائے اسلام ف کےامیر مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ قومی معاملات میں نرم یا سخت مداخلف ہر گز قبول نہیں کریں گے۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ کسی سے بلیک میل ہوں گے اور نہ دباؤ میں آئیں گے، آئین کے مطابق تمام فیصلے پارلیمنٹ میں طے کیے جائیں گے۔

انکا کہنا تھا جب سے پی ٹی ایم کی حکومت آئی پارلیمانی اور انتظامی امور میں مداخلت شروع ہوگئی ہے، یہ تماشہ بند ہونا چاہیے کیونکہ اسی تجاوز سے بحران پیدا ہوتے ہیں اور پھر جب ایسی صورت حال ہو تو بحران پیدا کرنے والے ادارے خود ہی علاج کے لیے آجاتے ہیں۔

امیر جے یو آئی نے کہا ادارے اپنے دائرہ اختیار کی حدود سے تجاوز نہ کریں، اگر ملک کی سلامتی عزیز ہے تو ادارے اپنی حدود میں رہیں، قومی امور میں نرم یا سخت مداخلت کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا۔

مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا جس وقت عمران خان کی حکومت تھی تو عدالتیں اور مقتدرہ حلقوں نے اُس کو مکمل اور غیر مشروط حمایت دی، عمران خان کی کوئی سیاسی حیثیت نہیں ہے، حکومت آئین و قانون کے مطابق پی ٹی آئی کے دورِ حکومت کی کرپشن کی تحقیقات کرے۔

Related Articles

Back to top button