میڈیکل رپورٹ میں دعا زہرہ نابالغ قرار،والد کا چیلنج کرنیکا فیصلہ

کراچی سے لاپتہ ہوکر پنجاب میں شادی کرنے والی دعا زہرہ کو میڈیکل رپورٹ میں نابالغ قرار دیا گیا ہے، جبکہ دعا کے والد مہدی علی کاظمی نے میڈیکل رپورٹ کو چیلنج کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

پولیس سرجن ایج سرٹیفکیٹ کے مطابق دعا زہرہ کی ہڈیوں کی عمر تقریباً 16 سے 17 سال کے درمیان ہے۔

دعاکی عمر کا اندازہ لگانے کیلئے جانچ سول ہسپتال کراچی کی وومن میڈیکولیگل آفیسر ڈاکٹر لاریب گل نے کی جبکہ ایکسرے سول سپتال کراچی کے شعبہ ریڈیولوجی میں کیا گیا تھا۔

رپورٹ میں چیف ریڈیالوجسٹ ڈاکٹر صباء جمیل نے اپنی رائے میں دعا زہرہ کی ہڈیوں کی عمر 16 سے 17 سال کے درمیان بتائی۔ سول ہسپتال کراچی کے چیف ریڈیولوجسٹ کے مطابق ہڈیوں کی عمر 17 سال کے زیادہ قریب ہے۔

یاد رہے کہ سندھ ہائیکورٹ نے 6 جون کو دعا زہرہ کی عمر کا تعین کرنے کا حکم دیا تھا، سندھ ہائیکورٹ نے 2 روز میں زہرہ کا میڈیکل ٹیسٹ کرانے اور 8 جون کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔

سندھ کی عدالت عالیہ نے دعا زہرہ کی عمر کا تعین کرنے کا اس وقت حکم دیا تھا جب لڑکی نے 18 سال کا ہونے کا دعویٰ کیا۔ دعا زہرہ نے جب سندھ ہائیکورٹ میں پیشی کے موقع پر کہا تھا کہ اس نے اپنی مرضی سے شادی کی ہے، عدالت عالیہ نے فیصلہ دیا کہ وہ حتمی فیصلہ کرنے سے پہلے زہرہ کی عمر کا تعین کرے گی۔

واضح رہے کہ جب بھی عدالت ایس او پیز کے مطابق عمر کے تعین کا حکم دیتی ہے، پولیس سرجن ایک میڈیکل بورڈ تشکیل دیتا ہے۔ پولیس سرجن کی نگرانی میں عمر کی تشخیص کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل دیا جاتا ہے جس کے ممبران میں ریڈیولوجسٹ اور ایگزامننگ میڈیکولیگل آفیسر بھی شامل ہوتے ہیں، لیکن دعا زہرہ کی عمر کے تعین کے معاملے میں میڈیکل بورڈ تشکیل نہیں دیا گیا، سب سے جونیئر ویمن ایم ایل او کو دعا زہرہ کی عمر کے تعین کا کام سونپا گیا۔

یہ بھی واضح رہے کہ پولیس سرجن ایچ سرٹیفکیٹ (پی ایس اے سی) کا مطلب ہے کہ یہ سند پولیس سرجن کی جانب سے جاری کی گئی ہے، میڈیکو لیگل آفیسر کی جانب سے نہیں، اس کے علاوہ ناصرف جاری کی گئی سند پولیس سرجن کی غیر موجودگی میں بنائی گئی بلکہ اس پر پولیس سرجن کے دستخط بھی موجود نہیں۔

دوسری جانب دعا زہرہ کے والد مہدی علی کاظمی نے بیٹی کی میڈیکل رپورٹ کو چیلنج کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔
مہدی علی کاظمی نے ہیلتھ سیکرٹری سندھ کے نام خط لکھا ہے ، جس میں کہا ہے کہ میری شادی 2005میں ہوئی اوردعا کی پیدائش 3سال بعد ہوئی، دعاکی عمر 16 اور 17 سال کے درمیان ہونا غلط ہے، دعا زہرہ کی عمر 14سال ہے ،(ب)فارم جمع کرادیا ہے، میڈیکل رپورٹ بنانے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے۔

گزشتہ روز دعا زہرہ اور اس کے شوہر ظہیر کو انتہائی سخت سکیورٹی میں سندھ ہائی کورٹ میں پیش کیا گیا تھا،عدالت نے دعا زہرا کی عمرکے تعین کے لیے ٹیسٹ کرانےکا حکم دیا تھا۔

یاد رہے کہ دعا زہرہ رواں سال اپریل میں شاہ فیصل کالونی، گولڈ ٹاؤن کے علاقے سے لاپتہ ہوگئی تھی۔ دعا کے والد سید مہدی علی کاظمی کی جانب سے سوشل میڈیا پر لوگوں سے اپنی بیٹی کو تلاش کرنے میں مدد دینے کیلئے پوسٹ کی گئی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد لڑکی کی گمشدگی کا واقعہ خبروں کی زینت بنا۔

خیال رہے کہ دعا نے متعدد ویڈیو پیغامات جاری کئے جن میں اس کا کہنا تھا کہ اس نے ظہیر سے شادی کیلئے اپنی مرضی سے والدین کا گھر چھوڑا، اس نے اپنے والدین کی جانب سے بتائی گئی عمر کے برعکس دعویٰ کیا تھا کہ وہ شادی کی قانونی عمر کو پہنچ چکی تھی۔

Related Articles

Back to top button