پی ٹی آئی انٹرا پارٹی الیکشن کیخلاف مخالف جماعتیں ہم آواز

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے انٹرا پارٹی الیکشن کے خلاف مخالف سیاسی جماعتوں نے ہم آواز ہو کر پارٹی انتخاب کو بدترین دھاندلی قراردیتے ہوئے مسترد اور الیکشن کمیشن سے نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا۔
مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا کہ پی ٹی آئی کے انٹرا پارٹی الیکشن میں دھاندلی نہیں، دھاندلا ہوا ہے، الیکشن نہیں تماشا ہوا۔” سلیکشن“ کا عمل صرف پندرہ منٹ میں مکمل ہوا، نہ ووٹرز تھے نہ ووٹر لسٹ، نہ پریزائیڈنگ افسر تھا اور نہ ہی الیکشن پراسیس۔
پیپلز پارٹی کے فیصل کریم کنڈی نے بھی الیکشن کمیشن سے پی ٹی آئی انٹرا پارٹی الیکشن کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔فیصل کریم کنڈی کا کہنا تھا کہ جس پارٹی کی بنیاد ہی دھاندلی پر رکھی جائے وہ آگے کیا کرے گی؟انہوں نے سوال کیا کہ الیکشن کمیشن بتائے کہ کیا مفرور لوگوں کو الیکشن لڑنے کی اجازت ہوگی؟
ترجمان استحکام پاکستان پارٹی فیاض الحسن چوہان نے کہا اگر اسی طرح 8 فروری كو جنرل الیكشن ہوئے تو كیا پی ٹی آئی تسلیم كرے گی؟پی ٹی آئی پارلیمنٹیرینز نے بھی پی ٹی آئی انٹرا پارٹی الیکشن کی تحقیقات کا مطالبہ کردیا۔
سابق وفاقی وزیر پرویز خٹک نے کہا پہلے پارٹی میں شفاف الیکشن کرائیں، پھر عام انتخابات کی شفافیت کا سوال کریں۔
تحریک انصاف کے بانی رکن اکبر ایس بابر نے پی ٹی آئی کے انٹرا پارٹی الیکشن کو چیلنج کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کارکنوں کے بنیادی حقوق کی دھجیاں اڑائی گئیں، جو لوگ پہلے کرپشن کی وجہ سے ایزی لوڈ تھے، اب وہ ڈاؤن لوڈ ہوگئے ہیں۔

Related Articles

Back to top button