کالعدم ٹی ٹی پی،ٹی ٹی آئی کا معاملہ،وزیر خارجہ نے کمیٹی تشکیل دیدی

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے کالعدم تحریک طالبان اور کالعدم تحریک افغانستان کے معاملات پر سیاسی جماعتوں سے رابطوں اور دہشت گردی کے معاملات پارلیمنٹ میں اٹھانے کے لیے تین رکنی کمیٹی تشکیل دے دی۔

پی پی چیئرمین بلاول بھٹو کی ہدایت پر بننے والی اس تین رکنی کمیٹی میں شیری رحمٰن، فرحت اللہ بابر اور قمر زمان کائرہ شامل ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز زرداری ہاؤس میں ہونے والے اجلاس میں تحریک طالبان افغانستان اور کالعدم تحریک طالبان پاکستان سے متعلق تبادلہ خیال ہوا، اعلیٰ سطح کے اجلاس میں پارلیمان کو وہ پہلا اور واحد فورم قرار دینے کے اپنے عزم کا اعادہ کیا گیا تھا جہاں ایسے موضوعات پر بحث کی جاسکتی ہے۔

پی پی پی کے میڈیا سیل کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سےجاری کردہ پیغام میں تین رکنی کمیٹی کے قیام کی تصدیق بھی کی گئی۔
یاد رہے کہ گزشتہ روز وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے کہا تھا کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان سے جاری مذاکرات سمیت دہشت گردی سے متعلق تمام فیصلے پارلیمنٹ کے ذریعے ہونے چاہئیں،انہوں نے کہانے متعدد مواقعوں پر بتایا ہے کہ وہ ذاتی طور پر دہشت گردی سے متاثر ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا تھا کہ ان کی جماعت آگے بڑھنے کے راستے پر اتفاق رائے کے لیے اتحادی جماعتوں سے رابطہ کرے گی،پی پی پی سمجھتی ہے کہ تمام تر فیصلے پالیمنٹ کو کرنے چاہئیں۔

گزشتہ روز سابق صدر آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو کے زیرِ صدرات اجلاس میں پارٹی کے سینئر رہنما یوسف رضا گیلانی، راجا پرویز اشرف، مراد علی شاہ، شیری رحمٰن، خورشید شاہ، فریال تالپور، نئیر بخاری، نجم الدین، فیصل کریم کنڈی، ہمایوں خان، قمر زمان کائرہ، چوہدری یاسین، چوہدری منظور، ندیم افضل چن، اخونزادہ چٹان، رخسانہ بنگش، نثار کھوڑو اور فرحت اللہ بابر نے شرکت کی تھی۔

پیپلز پارٹی کی جانب سے اجلاس کے بعد جاری کیے گئے بیان میں کہا گیاتھا کہ تمام تر فیصلے پارلیمنٹ کے ذریعے ہونے چاہئیں، لہٰذا پارلیمنٹ کو تمام فیصلوں میں لازمی شامل کیا جائے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ حکومت اور ٹی ٹی پی نے غیر معینہ مدت تک کے لیے جنگ بندی پر اتفاق کیا تھا اور قبائلی سرحدی علاقے میں دو دہائیوں سے جاری عسکریت پسندی کو ختم کرنے کے لیے مذاکرات جاری رکھے ہوئے ہیں۔

Related Articles

Back to top button