فیصلہ دل سے قبول، نمبر پورے ، جیت ہماری ہوگی

وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہبازنے کہا ہے کہ عدالت عظمیٰ نے کہا ضمنی الیکشن کے بعد 22 جولائی کو دوبارہ وزیر اعلیٰ پنجاب کا الیکشن ہو گا، 17 جولائی کو جس کے حق میں فیصلہ ہو اس کو قائد ایوان منتخب ہونا چاہیے، 17 جولائی کے دن دودھ کا دودھ اورپانی کا پانی ہوجائے گا، 22جولائی کا الیکشن ہماری جماعت ہی جیتے گی۔

سپریم کورٹ کے باہرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب پچھلے کئی ماہ سے آئینی بحران کا شکاررہاہے، کبھی الیکشن ملتوی اور کبھی حلف کا معاملہ التوا کا شکاررہا، کبھی گورنر آ رہا ہے اور جا رہا ہے، کبھی صدر سمری مسترد کر دیتے تھے، گنیزبک آگ ورلڈریکارڈ میں پنجاب کے آئینی بحران کونمبرون قرر دیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ کابینہ نہ ہونے کے باوجود ہم نے پنجاب کی عوام کو 200 ارب کی سبسڈی دی، ہم نے 10کلوآٹے کے تھیلے کو سستا کیا،پنجاب کے تمام اضلاع میں ڈی ایچ کیو، ٹی ایچ کیو میں کینسر سمیت تمام ادویات کی مفت فروخت کا عندیہ دے دیا ہے، میں نے گزشتہ حکومت کی طرح نہیں کہا مجھے تین ماہ دیدیں تو دودھ کی نہریں بہادوں گا، صوبے کی عوام کوریلیف دینے کے لیے دن رات کام کیا اعر کتے رہیں گے،امیدواراور پی ٹی آئی کا عدالت میں موقف ایک دوسرے سے الگ تھا، ان کی آپس میں سوچ بھی نہیں مل رہی تھی ۔

وزیراعلیٰ پنجاب نے کا کہنا تھا میں نے عدالت میں کہاکہ میرے پاس نمبرپورے ہیں، عدالت میں کہا جو بھی فیصلہ کریں گےدل سے قبول کروں گا، عدالت نے کہا ضمنی الیکشن کے بعد 22 جولائی کو دوبارہ الیکشن ہو گا، 17 جولائی کو جس کے حق میں فیصلہ ہواس کوقائد ایوان منتخب ہونا چاہیے، انہوں نے کہا مجھے نہیں معلوم کتنے دن ہوں جب تک ہوں صوبے کے عوام کی خدمت کروں گا۔ عدالت میں کہا جوبھی رزلٹ آئے گا قبول کریں گے، اللہ کے فضل سے پنجاب کی عوام ن لیگ پربھروسہ کرتی ہے ۔

ان کاکہنا تھا کہ گزشتہ حکومت نے کہا آئی ایم ایف نہ جانا بڑی غلطی تھی، عمران خان نے آئی ایم ایف نہ جا کر 6 ماہ ضائع کیے، عمران خان نے آئی ایم ایف سے معاہدہ کیا اوردوسری طرف عوام کوسستا پٹرول دیا، دل پرپتھررکھ کرپٹرول کی قیمتیں بڑھائئ گئیں، اگرہم سخت فیصلے نہ کرتے تو ایٹمی قوت دیوالیہ ہوجاتا، مشکلات کے باوجود ہم عوام کوریلیف فراہم کررہے ہیں، پٹرول کی قیمت حکومت بچانے کے لیے نہیں بڑھائی، یہ بوجھ ہے جوہم نے اٹھایا ہے۔

حمزہ شہباز نے کہا ڈپٹی سپیکر پر اسمبلی پر جان لیوا حملہ ہوا، سابق وزیراعظم نے ہمیں انتقام کا نشانہ بنایا کس منہ سے ہراساں کرنے کی باتیں کرتے ہیں، سوشل میڈیا پرعسکری اداروں کے خلاف زہراگلا جارہا ہے، اس سازش کے پیچھے توشہ خانہ کی چوریاں چھپانا تھا، اس آدمی نے اپنی انا کی خاطرآئین وقانون کو توڑا، 17 جولائی کا دن دودھ کا دودھ اورپانی کا پانی ہوجائے گا،22جولائی کا الیکشن(ن)لیگ جیتے گی، دل پرپتھررکھ کرفیصلے کررہے ہیں، سخت فیصلوں کے بعد عوام کے لیے آسانیاں پیدا کریں گے، مسلم لیگ (ن) نے ہمیشہ ملک کو مشکل حالات سے نکالا، ن لیگ نے ملکی مفاد کے لیے سخت فیصلوں کا سیاسی بوجھ اٹھایا، انشااللہ17جولائی کوعوام ایک بارپھر(ن)لیگ کی قیادت پراعتماد کا اظہار کرنے کے لیے تیارہیں۔

Related Articles

Back to top button