24 ستمبر سے حقیقی آزادی کی تحریک شروع کرنے کا اعلان

تحریک انصاف کے چیئرمین و سابق وزیر اعظم عمران خان نے24 ستمبر سے حقیقی آزادی کی تحریک شروع کرنے کا اعلان کر دیا ۔
لاہور میں وکلا کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیراعظم کا کہنا تھاجب سے امپورٹڈ حکومت آئی ہے ملک دلدل میں جارہا ہے، آج عالمی مالیاتی ادارہ(آئی ایم ایف) اور ورلڈ بینک کہہ رہا ہے پاکستان سری لنکا جیسی صورت حال میں جا رہا ہے،ایک طرف معیشت سکڑتی جا رہی ہے اور بے روزگاری برھتی جارہی ہے اور دوسری طرف مہنگائی آسمانوں کو چھو رہی ہے اور اس وقت ملک کی تاریخ میں مہنگائی 50 سال کی بلندی پر ہے۔

انہوں نےکہاملک کے اندر حالات سماجی افراتفری کی طرف جارہے ہیں، جب تک انصاف کا نظام ٹھیک نہیں ہوتا معیشت ٹھیک نہیں ہوگی، اس قوم کو قانون کی بالادستی کی ضرورت ہے،جس کو سزا ہونی تھی وہ وزیراعظم بنا ہے اور لندن میں جاکر ایک سزا یافتہ شخص سے مشورہ کر رہے ہیں کہ پاکستان کا آرمی چیف کون ہوگا،جو ملک کی قومی سلامتی کے لیے سب سے بڑا عہدہ ہے، وہ ایک مفرور اور جھوٹ بول کر باہر جانے والے فیصلہ کریں گے کہ پاکستان کی قومی سلامتی کے لیے سب سے اہم عہدے کے لیے۔
عمران خان نے کہا کورونا کے باوجود جو معیشت ٹھیک چل رہی تھی، اسے انہوں نے تباہ کردیا، آج بے روزگار بڑھ رہی ہے، 20 فیصد ٹیکسٹائل بند ہوگئی ہے اور کسان اسلام آباد پہنچ گئے ہیں،ٹیوب ویل اور کھادوں کے ریٹ آسمانوں پر ہیں، پاکستان کی فوڈ سیکیورٹی کا مسئلہ بنا ہوا ہے لیکن انہوں نے آتے ہی نیب کا قانون ختم کردیا اور اب اپنے مقدمے ختم کر رہے ہیں۔

انہوں نے وکلا کو مخاطب کرتے ہوئے کہا میں اس تحریک میں نکل چکا ہوں، ہفتے سے یہ تحریک شروع ہوجائے گی اور جب کال دوں تو میرے ساتھ نکلنا ہے،قوم سے کہہ رہا ہوں جو بھی آپ کو دھمکیاں دے، اس کو واپس دھمکی دو یہ کہتے ہوئے کہ میرا آئین میرے بنیادی حق اظہار آزادی کا تحفظ کرتا ہے۔

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ الیکشن سے یہ بھاگ رہے ہیں، ان کو پتا ہے یہ الیکشن جیت نہیں سکتے اور پاکستانی قوم کہاں کھڑی ہے، اس لیے یہ سارے مل کر کوشش کر رہے ہیں کہ کسی طرح کرسی پکڑ لیں ملک بے شک نیچے جائے،روپیہ 33 فیصد گرا ہے اور ملک کی دولت کم ہوئی ہے، یہاں لوگ غریب ہوئے ہیں۔

یاد رہے کہ دو روز قبل چکوال میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کارکنوں سے کہا تھا کہ سب تیاری کرو، میری کال کے لیے تیار رہو، خواتین بھی اس جنگ میں شرکت کریں گی، جب میں آپ کو کال دوں گا تو سب نکلیں،دھمکیاں دینے کے لیے گم نام نمبر سے ٹیلی فون آتے ہیں، ان کو واپس دھمکیاں دو، جو ڈراتا ہے، اس کو واپس ڈراؤ، جو مسٹر ایکس اور وائی دھمکیاں دے رہے ہیں ان کو واپس دھمکیاں دو، یہ ہوتے کون ہیں۔

Related Articles

Back to top button