اب عمران کو اپنے جھوٹے بیانیے کی قیمت ادا کرنا پڑے گی

وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا ہے کہ عمران خان نے فنانشل ٹائمز کو انٹرویودیتے ہوئے کہا امریکی سازش کا بیانیہ ختم ہوگیا اس کو کہیں پیچھے چھوڑآیا ہوں، اس کی ساری سیاسی زندگی یوٹرن پرہے۔ اس نے سائفر کو ساری بنیاد بنایا تھا، نا صرف امریکا اور پاکستان میں بھی ترلے ہو رہے ہیں، اب وقت آگیا ہے کہ قوم عمران خان کے گریبان پر ہاتھ ڈالے، ان کو اب اپنے جھوٹے بیانیے کی سیاسی قیمت ادا کرنا پڑے گی، ایسے لوگ موجود ہیں جو ایسے فراڈیوں کی باتوں پر یقین کرتے ہیں، عمران خان لانگ مارچ میں حقیقی آزادی کا رونا رورہا ہے، امپائرکی انگلی کا انتظارپہلے اور آج بھی کر رہا ہے، وہ چاہتا ہے کہ اس کے سرپرکوئی ہاتھ رکھے۔

انکا کہنا تھا باہر کے ملکوں سے ملنے والی قیمتی گھڑیاں غائب اور جعلی رکھ دی گئیں، اتحادی حکومت نے گزشتہ 7 ماہ میں کسی کے خلاف انتقامی کارروائی نہیں کی، ہم نے کسی پر آرٹیکل 6 نہیں لگایا جس طرح مجھ پرلگا، آصف زرداری کی بہن، نوازشریف کو بیٹی کو جیلوں میں ڈالا گیا، اس شخص کو رشتوں کی بھی پہچان نہیں تھی، ڈی جی آئی ایس آئی کو کہتا ہے میرے سارے مخالفوں کو اندر کرو، آج کہتا ہے بیرونی سازش اور سائفر کو بھول جاؤ، دو ہفتوں سے جی ٹی روڈ پر رُل گئے اور خود جا کر گھرمیں بیٹھ گیا، جی ٹی روڈ پر جو حالات ہے بتانے کی ضرورت نہیں، پچھلے 7 سے 8 ماہ میں حالات ٹھیک کرنے کی کوشش کررہے ہیں، عمران خان کھنڈرات چھوڑ کر گیا، نئی عمارت تعمیر کرنے کی کوشش کررہا ہے۔

اسحاق ڈار کو اثاثہ جات ریفرنس میں حاضری سے مستقل استثنیٰ

انہوں نے کہا سب لوگ سیلاب زدہ علاقوں میں گئے، عمران نہیں گیا، اس کی 22 کروڑعوام کے ساتھ کمٹمنٹ ہے، ابھی توبہت کچھ آنے والا ہے، ان کی کابینہ کا یہ حال تھا کا بند لفافہ لہرایا گیا اسے منظورکردو، سوہاوا میں زمین اور پچاس ارب لیا گیا، خواجہ آصف ایسے لوگوں کا ایوانوں میں پہنچنا حادثہ ہے، امریکی سائفر کے حوالے سے کل اس نے یوٹرن لیا، لاکھوں لوگوں پرکوئی اثرنہیں ہوا، ایک ورلڈ پاورہے، اس کے ساتھ ہمارے تعلقات میں اتار چڑھاؤ آتا رہا، ہم نے ان کی دہلیز پر الزام نہیں رکھا، اس نے الزام ان کی دہلیز پر رکھا۔سیاستدانوں کا کام بیرون ممالک سے تعلقات ٹھیک کرنا ہوتا ہے بگاڑنا نہیں۔ اس طرح نہیں کہ تم امریکی اخبار کو انٹرویو دے کر جان چھڑوا لو۔

خواجہ آصف نے کہا وزیر آباد، گجرات میں ایف آئی آردرج نہیں ہو رہی تو ہمارے ساتھ گلا کیوں، ان کی ساری کی ساری سیاست کی بنیاد ہی جھوٹ پرہے، آج سوشل میڈیا پر ویڈیو چڑھائی گئی، ابھی تک فیصلہ نہیں ہوا چار یا چھ گولیاں لگیں، ان کے لیے دعاگوہوں لیکن ملک کی قسمت کے ساتھ نا کھیلا جائے، جب اس ہاوس میں عدم اعتماد کامیاب ہوئی تو ایک نئے دور کا آغاز ہوا، ہماری حکومت کو سابق وزیراعظم نے کہا کہ یہ امپورٹڈ اور جعلی حکومت ہے، انہوں نے جیب سے پیپر نکالا اور کہا سازش کی گئی، اپنے جلسوں میں کہتا رہا میں حقیقی آزادی کی جنگ لڑ رہا ہوں۔ اس بندے نے اس ہاوس کے ووٹوں اور اراکین پر عدم اعتماد کیا، اس نے اس سارے آئینی عمل کو سازش کہا تھا، اب وقت آیا ہے تمہیں اس کی سیاسی قیمت ادا کرنی پڑے گی۔

قبل ازیں وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا آرمی چیف کی تعیناتی کا فیصلہ نہیں ہوا،اس تعیناتی کا فیصلہ وزیراعظم کریں گے، ابھی تک آرمی چیف تعیناتی پر مشاورت نہیں ہوئی یہ ہوائی خبریں ہیں۔ اب وقت آگیا ہے کہ قوم عمران خان کا محاسبہ کرے۔ یہ ابھی بھی امپائر کی انگلی کا منتظر ہے۔

خواجہ آصف سے صحافی نے سوال کیا کہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے امریکی سازش پر بیان تبدیل کیا ہے، کیا اب بھی اسے سازش کہا جائے گا؟ اس پر جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کیا عمران خان پہلی بار مکر رہا ہے وہ ہر چیز سے مکر جاتا ہے، گزشتہ چار سال سے کتنی باتیں کیں کسی بات پر عمران خان کھڑا رہا ہے؟ عمران خان کس حالت میں ہوتا ہے اور کیا کہہ جاتا ہے اسے خود یاد نہیں رہتا،عمران خان نے کل کہا ہے میرے قتل کی ایف آئی آر درج نہیں ہوئی، اس آدمی کو یہ پتہ ہی نہیں کہ وہ کہتا کیا ہے، اگر کچھ لوگ اس کی بات پر اعتبار کرنے کو تیار ہیں تو یہ انکا معاملہ ہے۔

صحافی نے سوال کیا کہ کیا آرمی چیف تعیناتی کا فیصلہ ہو چکا ہے؟اس پر جواب دیتے ہوئے خواجہ آصف نے کہا کہ آرمی چیف کی تعیناتی کا فیصلہ نہیں ہوا، ایک اور سوال کیا گیا کہ نواز شریف کا آرمی چیف تعیناتی میں کوئی کردار ہے؟ اس پر جواب دیتے ہوئے وزیر دفاع نے کہا کہ آرمی چیف تعیناتی پر مشورہ وزیر اعظم کی صوابدید ہے، وزیر اعظم ہی آرمی چیف تعیناتی کا فیصلے کریں گے،صحافی نے ایک مرتبہ پھر سوال کیا کہ نواز شریف سے کیا کوئی مشاورت بھی نہیں ہو رہی؟ وزیر دفاع نے کہا کہ ابھی تک آرمی چیف تعیناتی پر مشاورت نہیں ہوئی یہ ہوائی خبریں ہیں۔

Related Articles

Back to top button