منی لانڈرنگ کیس:شہباز، حمزہ کی ضمانت کنفرم،تحریری حکم نامہ جاری

لاہور کی سپیشل سینٹرل کورٹ نے وزیراعطم شہبازشریف اور وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہبازکے خلاف منی لانڈرنگ کیس میں ملزمان کی ضمانت کنفرم کرنےکا تحریری فیصلہ جاری کرديا۔

استعفے کے مطالبے پر الیکشن کمشنر نے عمران کو ٹھینگا دکھا دیا

خصوصی عدالت نے تحریری فیصلے میں کہا ہے کہ کرپشن، رشوت، اختیارات کے ناجائز استعمال پر ابھی کوئی شہادت میسر نہیں، کرپشن، رشوت، اختیارات کے غلط استعمال کے الزامات پر مزید تحقیقات کی ضرورت ہے۔عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ تفتیشی افسر نے ڈائری میں یہ تک نہیں لکھا کہ انہیں ملزمان کی حراست درکارہے، ریکارڈ کے مطابق ایف آئی اے نے لکھا کہ ایک سیاستدان نے پارٹی ٹکٹ کے نام پر شہباز شریف کو 14ملین دیے، لیکن ایف آئی اے آج تک اس سیاستدان کا نام نہیں بتا سکی، ایف آئی اے کے مقدمے میں بھی سیاستدان کے نام زکر نہیں ہے، جب کہ سیاستدان کی جانب سے 14ملین دینے کا بھی کوئی دستاویزی ثبوت فراہم نہیں کیا گیا۔

تحریری فیصلے کے مطابق پراسکیوشن کوئی ایک شواہد پیش نہیں کرسکی جس سے ثابت ہو کہ شہبازشریف رمضان شوگر ملز کے شئیر ہولڈرز یا ڈائریکٹر رہے ہوں، حمزہ شہباز رمضان شوگر ملز کے سی ای او رہ چکے ہیں، ایف آئی اے کوئی ثبوت پیش نہیں کر سکی جس سے ثابت ہو کہ تمام مشتبہ اکاؤنٹس حمزہ شہباز کی ہدایات پر کھولے گئے،ایف آئی اے نے شہباز شریف اور حمزہ شہباز سے جیل میں تحقیقات کیں، جیل میں تحقیقات کے بعد ایف آئی اے نے 5 ماہ کی پر اسرار خاموشی اختیارکی، شہباز شریف اور حمزہ کی آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں ضمانت منظور ہونے کے بعد ایف آئی اے نے دوبارہ کال آپ نوٹسز بھیجے، ایف آئی اے کا یہ عمل اسکی بدنیتی کو ظاہر کرتا ہے۔

عدالت کے تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانتیں کی توثیق کی جاتی ہے، عدالت یہ بات واضح کرتی ہے کہ ضمانت کی درخواست پر عدالتی فیصلے میں دیے گیے ریمارکس عارضی ہیں، ایسے ریمارکس سے کیس کے میرٹ اور ٹرائل پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز سپیشل سینٹرل عدالت کے جج جسٹس اعجاز حسن اعوان نے وزیراعظم شہباز شریف اور وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز سمیت دیگر ملزمان کے خلاف منی لانڈرنگ کیس پر سماعت کی،عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد وزیراعظم شہباز شریف ، وزیرِاعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز اور دیگر ملزمان کی عبوری ضمانت کی توثیق کردی،عدالت نے شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو 10، 10 لاکھ روپے کے مچلکے جبکہ دیگر شریک ملزمان کو 7 روز میں 2، 2 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کی تھی۔

Related Articles

Back to top button