سعودیہ کے 3ارب ڈالر ڈپازٹ کی مدت 1 سال بڑھا دی گئی

سعودی فنڈ فار ڈیولپمنٹ نے پاکستان کو دی گئی 3 ارب ڈالر ڈپازٹ کی سہولت میں توسیع کی تصدیق کردی۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے ٹوئٹر پر جاری بیان کے مطابق 3 ارب ڈالر کی رقم 5 دسمبر 2022 کو واپس کرنا تھی، جسے ایک سال کے لیے بڑھا دیا ہے۔

قومی بینک کا کہنا تھا کہ یہ ڈپازٹس اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے پاس رکھے جاتے ہیں ، اور یہ غیر ملکی زرمبادلہ کا حصہ ہوتے ہیں، یہ سعودی عرب اور پاکستان کے درمیان مسلسل مضبوط اور خصوصی تعلقات کی عکاسی کرتا ہے۔
خیال رہے کہ 24 مئی 2022 کو سعودی عرب کے وزیرخزانہ محمد الجدعان نے کہا تھا کہ پاکستان کو دی گئی 3 ارب ڈالر کی سہولت میں توسیع کو حتمی شکل دی جارہی ہے۔

برطانوی خبررساں ایجنسی رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق ڈیووس میں جاری ورلڈ اکنامک فورم کے اجلاس کے دوران غیررسمی ملاقات میں سعودی عرب کے وزیرخزانہ محمد الجدعان نے کہا تھا کہ ‘ہم اس وقت پاکستان کو 3 ارب ڈالر ڈپازٹ میں توسیع کو حتمی شکل دے رہے ہیں۔

عزت کیسے برقآراررکھنی ہے، اداروں کو سوچنا ہو گا

رپورٹ کے مطابق سعودی عرب نے گزشتہ برس پاکستان کے اسٹیٹ بینک میں 3 ارب ڈالر ڈپازٹ کیے تھے تاکہ پاکستان کے قومی ذخائر میں مدد ملے۔

سعودی وزیرخزانہ نے اس حوالے سے مزید تفصیلات نہیں بتائی تھیں تاہم یکم مئی کو دونوں ممالک نے ایک مشترکہ بیان میں کہا تھا کہ وہ ڈپازٹ میں توسیع کے لیے شرائط یا دوسرے ذرائع کے ذریعے تعاون کے امکانات پر تبادلہ خیال کریں گے۔ محمد الجدعان نے کہا تھا کہ پاکستان ایک اہم اتحادی ہے اور سعودی عرب پاکستان کے ساتھ کھڑا ہوگا۔

Related Articles

Back to top button