شجاعت کے فیصلے نے ملک کو عمرانی فتنے سے بچا لیا

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ غرور میں ڈوبے لوگوں نے دھمکیاں دیں، اللہ تعالیٰ کو غرور اور تکبر ہرگز پسند نہیں، تجربہ کار سیاستدان چوہدری شجاعت حسین کے فیصلے نے پاکستان کو عمرانی فتنے سے محفوظ کیا، اس ٹولے کے فساد سے محفوظ کیا اور آج ملک میں جمہوریت اور رواداری کو فروغ دیا ہے۔

پنجاب اسمبلی میں ووٹنگ کے بعد حمزہ شہباز کے وزیر اعلیٰ برقرار رہنے پر وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انکا کہنا تھا لوگوں نے آج سارا دن گھٹیا گفتگو دیکھی، فرعونیت، تکبر اور غرور میں غرق لوگوں نے آج سیاسی مخالفین، افسران کا نام لے لے کر گالیاں اور دھمکیاں دیں،شاید یہی وہ لمحات تھے جب اللہ تعالیٰ نے ہمیں سرخرو کرنے اور فسادیوں اور عمرانی فتنے کو سرنگوں کرنے کا فیصلہ کیا۔

انہوں نےکہا تجربہ کار سیاستدان چوہدری شجاعت حسین کے فیصلے نے پاکستان کو عمرانی فتنے سے محفوظ کیا، اس ٹولے کے فساد سے محفوظ کیا اور آج ملک میں جمہوریت اور رواداری کو فروغ دیا ہے،اتحادی جماعتوں کی قیادت اور تمام کارکنان چوہدری شجاعت کے اس فیصلے کو سراہتے اور خراج تحسین پیش کرتے ہیں، انہوں نے صحیح معنوں میں جو شخص ملک کو تقسیم کرنا چاہتا ہے، جو نواجوانوں کو گمراہ کرنا چاہتا ہے، جو شخص پاکستانی قوم کےلیے ناسور ہے، چوہدری شجاعت نے اس کی شناخت کرکے انہوں نے فیصلہ کیا، جس کی وجہ سے پاکستان مسلم لیگ (ن) کو کامیابی ملی۔

شہباز گل کو گرفتار کر لیا گیا، عمران خان کی مذمت

انکا کہنا تھا حمزہ شہباز اکثریت حاصل کرکے وزیراعلیٰ پنجاب منتخب ہوئے ہیں، ان کے انتخاب میں ان غریبوں کی دعاؤں کا بھی اثر ہوگا جن کے بجلی کے بل معاف کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا، اس فسادی ٹولے نے شور کیا تھا جس کے باعث یہ فیصلہ مؤخر ہوا تھا،چوہدری شجاعت حسین ان کی جماعت پاکستان مسلم لیگ (ق) کے ساتھ اس عمل میں جتنے بھی کردار شامل تھے ان سب کو اپنی اور اپنی جماعت کی جانب سے شکریہ ادا کرتا ہوں۔

رانا ثنا اللہ نے کہاجولائی کے ضمنی انتخابات کا نتیجہ پی ایل ایل (ن) کے اپنے فیصلے کی وجہ سے ہمارے خلاف آیا تھا، ہم نے اپنے اس غلط فیصلے کو بھی تسلیم کیا، اور انتخابی نتائج کو بھی تسلیم کیا لیکن اس کے باوجود ہمیں اور الیکشن کمیشن آف پاکستان کو گالیاں دیں،پنجاب کے ضمنی انتخابات میں ہمارے ووٹوں میں اضافہ ہوا ہے جبکہ ہمارے اور پی ٹی آئی کے ووٹوں میں معمولی فرق تھا،اللہ تعالیٰ نے اس عمرانی فتنے کو جس ذلت سے دوچار کیا ہے، جس طرح اس کی شناخت پوری قوم کو ہو رہی ہے، یہ الیکشن کا سال ہے اور جب عام انتخابات ہوں گے تو پاکستان کی سیاسی جماعتیں مل کر اس فتنے کا ہر علاقے میں مؤثر اور شافی علاج کریں گے۔

وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ 63اے کے تحت سپریم کورٹ کے لارجر بینچ کے فیصلے کی رو سے پارٹی کی ہدایت کے خلاف کاسٹ کیا جانے والا ووٹ شمار نہیں کیا جائے گا، اور وہ لوگ نااہل بھی ہوں گے، اس فیصلے کا نشانہ 25 لوگ پہلے ہی بن چکے ہیں، ان تمام کا تعلق پاکستان تحریک انصاف سے تھا، سپریم کورٹ کے اس فیصلے میں پی ٹی آئی کے سیکریٹری جنرل اسد عمر نے تمام اراکین کو خط لکھا کہ پارٹی کے سربراہ عمران خان کی ہدایت ہے کہ آپ چوہدری پرویز الہٰی کو ووٹ دیں گے اور اگر ووٹ نہیں دیا تو پارٹی ہدایت کی خلاف ورزی کریں گے۔

رانا ثنا اللہ نے کہا اسی بنیاد پر یعنی پارٹی سربراہ اور سیکریٹری جنرل کے لیٹر ہیڈ پر 25 ارکین پنجاب اسمبلی ڈی سیٹ ہوئے، بعد ازاں یہ فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج ہوا، آج پنجاب اسمبلی میں جو اعتراض راجہ بشارت نے پیش کیا وہ سپریم کورٹ اور الیکشن کمیشن کے سامنے بھی رکھا گیا،پارٹی سربراہ کی ہدایات اور سیکریٹری جنرل کا لیٹر ہیڈ پارٹی ممبران کو سمجھانے کے لیے کافی تھا کہ پارٹی کی ہدایات کیا ہے، لہٰذا ان لوگوں نے پارٹی کی ہدایات کی خلاف ورزی کی ہے اس لیے یہ 25 اراکین ڈی سیٹ ہوئے تھے۔

انکا کہنا تھا الیکشن کمیشن اور سپریم کورٹ کا آرٹیکل 63 اے کا فیصلہ موجود ہے جبکہ اسمبلی کی کارروائی کو آئینی تحفظ حاصل ہے اس لیے یہ فیصلہ برقرار رہے گا، ہم پنجاب اور مرکز میں اپنی خدمات جاری رکھیں گے۔

رانا ثنا اللہ نے کہامعلوم ہوا ہے کہ عمران خان آ رہے ہیں، انہوں نے کل بھی کہا تھا کہ اس کے بعد جو کچھ ہوگا اس کی ذمہ داری ان پر عائد نہیں ہوگی، جی آپ کی ذمہ داری نہیں ہوگی، جو آپ کرنا یا کروانا ہے اس کی تیاری کریں، ہم آپ کو روک کر دکھائیں گے،ہم قانون، لوگوں کی عزت و احترام کرنا آپ کو ازبر کروائیں گے، سوال یہ پیدا نہیں ہوتا کہ آپ کسی قسم کا تشدد یا کوئی اور معاملہ کرنے کی کوشش کریں، اگر آپ نے لا اینڈ آرڈر کی صورتحال پیدا کرنے کی کوشش کی تو سختی کے ساتھ نمٹا جائے گا، قانون کی حکمرانی کو ہر صورت یقینی بنائیں گے، آپ کو اس قسم کی بھول نہیں ہونی چاہیے۔

وزیر خارجہ و پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک مختصر ٹویٹ میں کہا کہ ایک زرداری سب پہ بھاری۔

مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے ردعمل دیتے ہوئے لکھا کہ چودھری شجاعت نے دباؤ کے باوجود اصولی فیصلہ کیا اور اپنی عزت اور توقیر میں اضافہ کیا۔

مریم نواز نے کہا فتنہ خان نے اپنے اقتدار کے لیے نا صرف چودھری خاندان میں پھوٹ ڈلوائی بلکہ سپریم کورٹ کے فیصلے کی رو سے چودھری پرویز الہی کی سپیکرشپ اور سیٹ بھی چھین لی، یہ شخص جہاں جاتا ہے نحوست پھیلاتا ہے۔

Related Articles

Back to top button