سجل علی نے ہمایوں سعید کو سر کہہ کر شکریہ کیوں ادا کیا؟

 

پاکستانی ڈرامہ اور فلم انڈسٹری کی معروف اداکارہ سجل علی نے اداکاری کی دنیا میں چانس دینے کا سہرا اداکار ہمایوں سعید کے سر باندھتے ہوئے ایک بھری محفل میں انھیں سر کہتے ہوئے ان کا شکریہ ادا کیا ہے۔ فلم فیئر مڈل ایسٹ اچیورز نائٹ میں شرکت کے موقع پر اداکارہ کا کہنا تھا کہ ہمایوں سعید ہی وہ شخصیت ہیں جنھوں نے مجھ پر اعتماد کرتے ہوئے اداکاری کا پہلا چانس دیا۔ پچھلے برس اپنے شوہر احد رضا میر سے علیحدگی اختیار کر جانے والی سجل علی نے ایوارڈ وصول کرنے کے بعد اظہارِ خیال کرتے ہوئے کہا کہ میں ہمیشہ سے یہ چاہتی تھی کہ مجھے کبھی موقع ملے تو میں اس ایک شخص کا شکریہ ضرور ادا کروں گی، جس نے مجھ پر سب سے پہلے یقین کیا اور پہلی بار مجھے بہت سارے لوگوں کے سامنے پَرفارم کرنے کا موقع فراہم کیا۔

سجل نے سینئر اداکار ہمایوں سعید کا شکریہ ادا کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ وہ شخص ہمایوں ہیں جنہوں نے سجل کو اداکاری کا موقع فراہم کیا اور وہ آج اتنی بڑی اداکارہ بن چکی ہیں۔ سجل کی یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر خوب وائرل ہو رہی ہے، سجل نے ہمایوں سعید کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ سر مجھ پر بھروسہ کرنے کے لیے بہت شکریہ‘۔

سجل کی اس ایوارڈ شو میں بھارتی اداکارہ سری دیوی کی بیٹی جھانوی کپور سے بھی ملاقات ہوئی ان کی دوستی والدہ کے ساتھ سجل کی فلم ’موم‘ کی شوٹنگ کے دوران ہوئی تھی تاہم بھارتی حکومت کی لگائی گئی پابندی کے باعث سالوں سے پاکستانی اداکاروں کی بھارتی اداکاروں سے ملاقات نہ ہو سکی تھی۔ یاد رہے کہ سجل علی نے اپنے کیریئر کا آغاز 2011ء میں ڈرامہ سیریل محمودآباد کی ملکائیں‘ سے کیا تھا جو ہمایوں سعید کے پروڈکشن ہاؤس ’سکس سِگما پلس‘ کی تخلیق تھا اور اس کے بعد کچھ ہی سالوں میں سجل علی دنیا بھر میں پاکستان کی بہترین اداکارہ بن کر اُبھریں۔

اداکارہ اب تک چار فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھا چکی ہیں جن میں 2016 میں ریلیز ہونے والی فلم زندگی کتنی حسین ہے، 2017 میں ریلیز ہونے والی فلم موم، 2021 میں ریلیز ہونے والی فلم کھیل کھیل میں اور 2022 میں ریلیز ہونے والی واٹس لوو گاٹ ٹو ڈو ود اٹ میں صلاحیتوں کے جوہر دکھا چکی ہیں۔ فلموں کے ساتھ ساتھ اداکارہ نے خود کو بے شمار ڈراموں میں بھی آزمایا ہے جس میں 2009 میں ریلیز ہونے والا ڈرامہ نادانیاں، محبت کی ملکائیں، مستانہ ماہی، میرے قاتل میرے دلدار، میری لاڈلی، چاندنی، احمد حبیب کی بیٹیاں، محبت جائے بھاڑ میں، ستم گر، سرال کے رنگ انوکھے، قدوسی صاحب کی بیوہ، ننھی، کہانی ایک رات کی سمیت دیگر ڈرامے شامل ہیں۔

Related Articles

Back to top button