’’ندا یاسر کو مارننگ شو سے 2 مرتبہ استعفیٰ کیوں دینا پڑا‘‘

معروف مارننگ شو میزبان ندا یاسر نے انکشاف کیا ہے کہ شدید ڈپریشن کے مسائل کی وجہ سے دو مرتبہ ٹی وی چینل انتظامیہ کو استعفیٰ بھجوایا لیکن انھوں نے واپس کر دیا۔ندا یاسر ’اے آر وائی‘ پر گڈ مارننگ پاکستان نامی مارننگ شو کرتی ہیں، وہ ڈیڑھ دہائی سے مارننگ شو کرتی آ رہی ہیں، ان کے مارننگ شوز کے درجنوں کلپس وائرل ہو چکے ہیں، جن پر میزبان کو تنقید کا نشانہ بھی بنایا جاتا رہا ہے۔ندا یاسر کے مارننگ شو کو ملک کے سب سے معروف مارننگ شو کا اعزاز بھی حاصل ہے، جہاں شوبز شخصیات نہ صرف فلموں اور ڈراموں بلکہ اپنے برانڈز کی تشہیر کے لیے بھی آتی ہیں۔حال ہی میں ندا یاسر نے شائستہ لودھی کو دیئے گئے انٹرویو میں اعتراف کیا کہ وہ متعدد مسائل کی وجہ سے ڈپریشن کا شکار رہی ہیں لیکن ان کی ڈپریشن کا واحد سبب مارننگ شو نہیں، بتایا کہ اب انہیں اب ڈپریشن پر قابو پانے کے طریقے آگئے ہیں لیکن اس کے باوجود وہ مختلف معاملات کی وجہ سے پریشانی کا شکار ہوجاتی ہیں کیوں کہ بالآخر وہ ایک انسان ہیں۔انہوں نے یہ اعتراف بھی کیا کہ ان سے مارننگ شو کے درمیان کئی غلطیاں ہوجاتی ہوں گی کیوںکہ وہ مسلسل ڈھائی گھنٹے کا براہ راست مارننگ شو کرتی ہیں جو ہفتے میں پانچ دن نشر ہوتا ہے، جب ٹی وی چینلز پر بہت سارے مارننگ شوز نشر ہوتے تھے تب ان پر تنقید نہیں ہوتی تھی لیکن جیسے ہی تمام شوز بند ہوگئے تو تنقید کی توپوں کا رخ ان کی جانب ہوگیا۔صارفین کی جانب سے آنٹی کہنے کے سوال پر ندا یاسر نے جواب دیا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ ان کی عمر بڑھ رہی ہے لیکن وہ اپنی عمر سے مطمئن ہیں اور اسے انجوائے کر رہی ہیں۔انہوں نے انکشاف کیا کہ بہت ساری شخصیات ڈراموں کے شوٹنگ سیٹ پر ان کی برائیاں بھی کرتی ہیں لیکن حیران کن طور پر ان کی برائیاں کرنے والی شخصیات نے ہی ان کے چینل کو مارننگ شو کی میربانی کیلئے درخواستیں کیں، انہوں نے واضح کیا کہ وہ ویسے بھی مارننگ شو شوبز شخصیات کے لیے نہیں بلکہ عام عوام اور خصوصی طور پر خواتین کے لیے کرتی ہیں، ان کے حوالے سے جسے جو کہنا ہے، کہتا رہے، انہیں کوئی فرق نہیں پڑنے والا، ندا یاسر نے یہ بھی واضح کیا کہ بعض لوگوں نے مارننگ شوز اور اس کے میزبانوں کے حوالے سے دل اور دماغ میں غلط تاثر بنا رکھا ہے، حقیقت میں ایسا نہیں ہوتا جیسا وہ لوگ سوچتے ہیں۔

Related Articles

Back to top button