خواجہ سرا ڈانسر بارے بنی فلم کا پاکستان میں ریلیز کا اعلان

ہدایت کار، لکھاری و اداکار صائم صادق نے اپنی ‘کانز فیسٹیول’ ایوارڈ یافتہ مختصر فلم ‘جوائے لینڈ’ کو پاکستان میں بھی ریلیز کرنے کا اعلان کر دیا ہے، صائم صادق کی فلم ’’جوائے لینڈ‘‘ کو رواں برس مئی میں فرانس میں ہونے والے کانز فلم فیسٹیول میں پیش کیا گیا تھا اور اسے کانز کے اعلیٰ ترین ایوارڈ سے بھی نوازا گیا تھا۔ جوائے لینڈ کو کانز کوئیر پام ایوارڈ سے نوازا گیا تھا جو کہ خصوصی طور پر ہم جنس پرست یا پھر مخنث افراد کی کہانیوں پر مبنی فلموں کو دیا جاتا ہے، جوائے لینڈ پہلی پاکستانی فلم تھی، جس نے ‘کوئیر پام’ ایوارڈ حاصل کیا تھا۔ اس فلم میں ثروت گیلانی، ثانیہ سعید، علی جونیجو، علینہ خان اور رستی فاروق شامل ہیں۔

اشتعال انگیز تقریر میں سہولت کاری میں گرفتار بابر غوری رہا

’’جوائے لینڈ‘‘ کی کہانی ایک ایسے نوجوان کے گرد اور مخنث ڈانسر کے گرد گھومتی ہے جو ڈانس کلب میں کام کرنے کے دوران ایک دوسرے کی محبت میں گرفتار ہو جاتے ہیں۔ فلم جوائے لینڈ کانز فلم فیسٹیول میں اعزاز حاصل کرنے والی پہلی پاکستانی فلم ہے۔ خواجہ سراؤں کو نارمل انسان کا درجہ دینے کی اس فلم کی کہانی تعریفوں کا مرکز بنی ہوئی ہے۔ فلم کو کہانی کے اچھوتے موضوع کی وجہ سے کافی سراہا گیا اور پاکستان جیسے معاشرے میں معیوب سمجھے جانے والے موضوع پر فلم بنانے کی وجہ سے ہی اس کی ٹیم کو اعلیٰ ترین عالی ایوارڈ دیا گیا تھا، فلم کو دوسرے عالمی فلم فیسٹیولز میں بھی پیش کیا گیا تھا اور اب اس کے ہدایت کار نے اسے ملک میں بھی ریلیز کرنے کا اعلان کر دیا۔صائم صادق نے اپنے نجی انٹرویو میں جوائے لینڈ کی کہانی اور اسے ملنے والی عالمی پذیرائی پر بات کرتے ہوئے بتایا کہ وہ جلد ہی فلم کو ملک میں بھی ریلیز کریں گے، فلم ساز نے بتایا کہ ان کا ارادہ ہے کہ وہ رواں برس موسم سرماں میں ‘جوائے لینڈ’ کو پاکستان میں ریلیز کریں۔

ایک سوال پر صائم نے بتایا کہ انہیں لگتا ہے کہ فلم سینسر بورڈ ان کی فلم پر اعتراض کریں گے، کیونکہ اس میں ایسا کوئی منظر یا ڈائیلاگ نہیں جو متنازع یا فحش ہو، ان کے مطابق آج کل پاکستان میں ریلیز ہونے والی بہت ساری فلموں میں گالیاں بھی شامل ہوتی ہیں مگر ان کی فلم میں نہ تو گالی شامل ہے اور نہ ہی کوئی اور متنازع ڈائیلاگ ہے۔

صائم صادق کا کہنا تھا کہ ان کا خیال ہے کہ فلم سینسر بورڈ ان کی فلم پر کسی طرح کا کوئی اعتراض نہیں کرے گا اور یہ کہ ’’جوائے لینڈ‘‘ میں ایسا کوئی ڈائیلاگ یا منظر ہے ہی نہیں کہ اس پر اعتراض کیا جائے، اگرچہ فلم کو رواں برس موسم سرماں میں ریلیز کرنے کا اعلان کیا، تاہم صائم نے واضح نہیں کیا کہ ’’جوائے لینڈ‘‘ کو سینماؤں میں پیش کیا جائے گا یا پھر اسے آن لائن ریلیز کیا جائے گا۔

Related Articles

Back to top button