حمزہ علی عباسی آئٹم سانگ کے حق میں کیوں نہیں؟

معروف فلمسٹار و اداکار حمزہ علی عباسی نے انکشاف کیا ہے کہ وہ کسی طرح کے آئٹم سانگ کے حق میں نہیں کیوںکہ ان کی نظر میں ایسے گانے جنسی طور پر اشتعال دلانے یا جنسی خواہشات کو بیدار کرنے والی شاعری اور مناظر پر مبنی ہوتے ہیں، سوشل میڈیا پر ایک پوڈکاسٹ کی وائرل ہونے والی مختصر ویڈیو میں حمزہ علی عباسی کو اداکار احد رضا میر سمیت دیگر اداکاروں کے ساتھ آئٹم سانگس پر بات کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔انہوں نے واضح طور پر آئٹم سانگس کی مخالفت کی اور کہا کہ وہ کسی بھی صورت میں ایسے گانوں کو سپورٹ نہیں کرسکتے، وہ بیہودہ شاعری اور مناظر پر مبنی گانوں کے حق میں نہیں، آئٹم سانگس کی شاعری اور ان کے مناظر جنسی خواہشات کو اُبھارنے والے ہوتے ہیں اور جن لوگوں کا کہنا ہوتا ہے کہ ایسے گانوں کے مناظر کو بلر کیا جائے یا ڈانس کرنے والوں کو مکمل لباس میں دکھایا جائے وہ غلط ہیں۔اداکار کا کہنا تھا کہ ایک آئٹم سانگس ہوتے ہیں اور دوسرے گانے ہوتے ہیں، دونوں میں فرق ہوتا ہے، جس میں صرف رقص دکھایا جائے اور کوئی نیم عریاں اور بولڈ منظر نہ ہو، وہ گانے ہوتے ہیں، وہ ان کی مخالفت نہیں کر رہے لیکن وہ کسی بھی صورت میں آئٹم سانگ کی حمایت نہیں کریں گے۔انہوں نے مثال دی کہ میں ٹوٹی فروٹی ہوں، کھا لے مجھے اور میں بلی ہوں، نوچ لے مجھے جیسے گانے جنسی طور پر اشتعال دلانے والی شاعری پر مبنی ہے اور ایسے ہی گانے آئٹم سانگس ہوتے ہیں اور وہ ان کے حق میں نہیں۔اداکار کا کہنا کہ ہمیں ایسے گانوں کو تسلیم کرنے کے لیے اپنے آپ کو جھوٹی تسلیاں دیتے ہیں اور کہتے ہیں کہ ایک ہاٹ ہوتا ہے، ایک ولگر ہوتا ہے، ایک سیکسی ہوتا ہے، اس طرح کی متضاد کوئی لائنز نہیں ہوتیں، سب ایک ہی ہیں اور یہ سب خود کو جھوٹی تسلی دینے کے

ارباز خان نے سابقہ گرل فرینڈ کو جھوٹی قرار کیوں دیا؟

لیے کہا جاتا ہے۔

Related Articles

Back to top button