عمران خان کو شوکت خانم ہسپتال سے ڈسچارج کردیا گیا

تحریک انصاف کے چیئرمین وسابق وزیر اعظم عمران خان کو شوکت خانم ہسپتال سے ڈسچارج کردیا گیا۔

حکومت مخالف لانگ مارچ کے دوران وزیرآباد فائرنگ میں زخمی ہونے والے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کو شوکت خانم ہسپتال سے ڈسچارج کردیا گیا ہے، اور ان کی ڈسچارج سلپ بنادی گئی ، ڈاکٹرز نے انہیں 10 روز آرام کا مشورہ دیا ہے۔

جس کے بعد عمران خان اپنی لاہور زمان پارک کی رہائش پہنچ گئے، اس حوالے سے چیئرمین پی ٹی آئی کا پروٹوکول اور سیکیورٹی اسکواڈ لگا دیا گیا ہے۔

عمران کو قتل کی دھمکیاں:عطاتارڑ سمیت دیگر پر دہشتگردی کا مقدمہ

عمران اب زمان پارک لاہور میں قیام کر یں گے اور یہیں سے لانگ مارچ کی قیادت کر یں گے۔

واضح رہے کہ عمران خان کے اسپتال سے ڈسچارج ہونے سے پہلے شوکت خانم اسپتال نے وضاحتی بیان جاری کیا تھا جس میں عمران خان کو چار گولیاں لگنے کا دعوی مسترد کردیا تھا۔شوکت خانم اسپتال کی جانب سے جاری کردہ دستاویز کے مطابق عمران خان کے جسم میں گولی کے ٹوٹل چار ٹکڑے تھے، جنہیں نکالنے کيلئے آپریشن کيا گيا۔

ہسپتال نے وضاحتی بیان میں بتایا کہ عمران خان کے جسم میں گولی کے ٹوٹل 4 ٹکڑے تھے، عمران خان کی دائیں ٹانگ سے آپریشن کرکے ٹکڑے نکالے گئے، جب کہ بائیں ٹانگ سے ٹکڑا نہیں نکالا گیا، عمران خان اسپتال پہنچنے پر مکمل ہوش میں تھے، اور اب ان کی حالت تیزی سے بہترہورہی ہے۔

Related Articles

Back to top button