اداکارہ کرن اشفاق کا عمران اشرف سے علیحدگی پر بڑا انکشاف

اداکارہ کرن اشفاق نے انکشاف کیا ہے کہ عمران اشرف سے شادی پر مجھ پر بہت سی پابندیاں عائد کر دی گئی تھیں، میں کسی تقریب، فیملی ایونٹ تک میں شرکت نہیں کر سکتی تھی جس پر شادی کے شروع میں ہی علیحدگی کا فیصلہ کیا لیکن والدہ کے اصرار پر شادی کو نبھاتی رہی کیونکہ چھوٹی بہنوں کے مستقبل کا بھی مسئلہ تھا، کرن اشفاق نے 4 دسمبر کو پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے رہنما حمزہ علی چوہدری سے دوسری شادی کی تھی، اس سے قبل کرن اشفاق نے 2018 میں اداکار عمران اشرف سے شادی کی، ان کے ہاں 2020 میں بیٹے کی پیدائش ہوئی اور دونوں کے درمیان نومبر 2022 میں طلاق ہوگئی تھی، حال میں ہی کرن اشفاق نے ٹک ٹاکر کنول آفتاب کے پوڈ کاسٹ میں شرکت کے دوران بتایا کہ وہ اب بھی ماڈلنگ کر رہی ہیں لیکن بیٹے کی وجہ سے ٹی وی ڈراموں سے ابھی بریک لیا ہوا ہے، دوسرے شوہر حمزہ علی کے بارے میں بتایا کہ ان کا تعلق لاہور سے ہے لیکن کراچی میں کام کرتے ہیں، ’اب میرے دو گھر ہیں، لاہور میں میری ساس ہیں اور کراچی میں میرا بیٹا ہے، اپنے شوہر سے زیادہ ساس سے باتیں کرنے میں مزا آتا ہے، میری ساس بہت اچھی ہیں، ساس کی تعریف کرتے ہوئے کرن اشفاق آبدیدہ ہوگئیں، بولیں کہ یہ خوشی کے آنسو ہیں، مجھے توقع نہیں تھی کہ میری ساس اتنی اچھی ہوں گی، ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ گزشتہ 5 سال سے میرے والدین کو سکون کی نیند نہیں آئی، حمزہ علی سے شادی کے بعد میرے والدین کو ذہنی سکون ملا، اس کے لیے میں اپنے شوہر حمزہ اور ان کی فیملی کا شکریہ ادا کرنا چاہوں گی، اداکارہ نے کہا کہ شادی کے 5 سالوں کے دوران عمران اشرف نے انہیں سپورٹ نہیں کیا، اس کے علاوہ بھی کئی مسائل چل رہے تھے جو میں اپنی والدہ سے شئیر کرتی تھی، امی میرے مسائل ابو کو نہیں بتاتی تھیں، لیکن جس دن میری طلاق ہوئی اس کے اگلے 5 روز تک ابو ملائیشیا کے ہسپتال میں داخل تھے، میری ہمت نہیں تھی کہ اپنے مسائل کے بارے میں دونوں بھائیوں سے بات کر سکوں، اداکارہ نے کہا کہ وہ اس حوالے سے مزید تفصیلات میں نہیں جانا چاہتیں کیونکہ پھر لوگ کہتے ہیں کہ ’میں اتنے سال چپ رہی پہلے ہی چھوڑ دیتی، لیکن میری والدہ نہیں چھوڑنے دیتی تھیں، امی کہتی تھیں کہ کچھ بھی ہوجائے برداشت کرو، گھر بسانا ہے، دو بڑی بہنیں بھی ہیں، انہوں نے کہا کہ ’میری طلاق اکتوبر میں نہیں بلکہ زبانی طور پر بہت پہلے ہوچکی تھی، اکتوبر میں صرف طلاق کے کاغذات مکمل کرنے تھے، میری طلاق فیملی کورٹ کے ذریعے ہوئی تھی، عمران اشرف نے خود مجھے طلاق دی تھی، میں خلا کے حق میں نہیں تھی، طلاق کے بعد سوچ لیا تھا کہ شادی نہیں کرنی، ملائیشیا جانے کے بعد ابو نے میرا رشتہ ڈھونڈھنا شروع کردیا، دوسری شادی نہ کرنے کے لیے ابو سے بہت بحث کی، میرا موقف تھا کہ بیٹا جب تک 10 سال کا نہیں ہوتا دوسری شادی نہیں کروں گی، کیونکہ اس وقت میری ذہنی حالت بہت خراب تھی، دماغی دورے پڑنا شروع ہوگئے تھے، کرن اشفاق نے کہا کہ ’والد کو نمازوں میں روتا دیکھ کر میں شادی کے لیے راضی ہوگئی لیکن میری شرط تھی کہ جس سے بھی شادی ہو اس کا تعلق کراچی سے ہو کیونکہ میں اپنے بیٹے کے بغیر نہیں رہ سکتی، میرے بیٹے نے دو سال کی عمر سے اپنے والدین کو ایک ساتھ نہیں دیکھا، اداکارہ نے یہ بھی بتایا کہ وہ اور عمران اشرف اپنے بیٹے کے تمام ایونٹس میں ایک ساتھ جاتے ہیں، ’روحام کے معاملے میں عمران اشرف بہت سپورٹ کرتے ہیں، طلاق کے بعد کچھ لوگ اسکرین شاٹ لے کر میرے بھائیوں

سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کے گھر میں کریکر دھماکہ

کو بھیجتے اور میری طلاق کی خبر پر افسوس کرتے تھے۔

Related Articles

Back to top button