خلیل الرحمن قمر کا ماہرہ خان کو معاف کرنے کا اعلان

معروف اداکارہ ماہرہ خان اور ڈرامہ ساز خلیل الرحمن قمر کے درمیان ’’میرا جسم میری مرضی‘‘ کی مہم سے شروع ہونے والی لفظی جنگ اختتام کو پہنچ گئی ہے کیونکہ خلیل قمر نے اپنے خلاف سخت الفاظ استعمال کرنے والی ماہرہ کو معاف کرنے کا اعلان کر دیا ہے، یاد رہے کہ ماہرہ خان نے خلیل قمر کی جانب سے ماروی سرمد کے خلاف اپنے لائیو ٹی وی شو میں نازیبا زبان استعمال کرنے پر سخت تنقید کی تھی۔ ماہرہ کی جانب سے سخت الفاظ کے استعمال کے بعد خلیل قمر نے مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ میرا قصور یہ ہے کہ میں نے ماہرہ کو زمین سے اٹھا کر آسمان پر پہنچا دیا۔ لیکن انہوں نے یہ اعلان بھی کیا کہ وہ آئندہ اپنے کسی ڈرامے یا فلم میں ماہرہ کو کاسٹ نہیں کریں گے۔

خلیل قمر اور ماہرہ خان کے درمیان ڈھائی سال سے لفظی جنگ جاری تھی۔ اس جنگ کا آغاز تب ہوا جب ماہرہ خان نے مارچ 2020 میں ڈرامہ ساز کے خلاف ایک ٹوئٹ کی تھی۔ خلیل قمر پچھلے کچھ عرصے میں بار بار یہ بات دہرا چکے ہیں کہ خدا نہ کرے وہ کبھی ماہرہ کو معاف کریں۔ ان کا کہنا ہے کہ ماہرہ خان کو کو سپر سٹار بنانے میں ان کا بنیادی کردار ہے لیکن اس نے احسان فراموشی کی۔ انہوں نے 2014 کے مقبول ڈرامے ‘صدقے تمہارے’ میں اداکارہ کو کاسٹ کرنے کو زندگی کی سب سے بڑی غلطی بھی قرار دیا۔ رواں برس جولائی میں ڈرامہ ساز نے ایک انٹرویو کے دوران کہا تھا کہ اللہ نہ کرے کہ وہ کبھی ماہرہ کو معاف کریں مگر اب خلیل قمر نے کہا ہے کہ انہوں نے ماہرہ کو معاف کر دیا ہے۔

خلیل قمر نے سما ٹی وی کے شو میں ایک سوال کے جواب میں کہا کہ بعض خواتین فیمنزم کے نام پر بے حیائی پھیلا رہی ہیں لیکن میرے خیال میں بے حیائی کو لبرل ازم نہیں کہا جا سکتا۔ ڈرامہ ساز نے کہا کہ میں نے کبھی کسی خاتون کو دو ٹکے کی عورت نہیں کہا، ’’میرے پاس تم ہو‘‘ نامی مشہور ڈرامے میں ‘دو ٹکے کی لڑکی کا ڈائیلاگ صرف ایک ہی عورت یعنی ڈرامے کے کردار والی لڑکی کے لیے لکھا تھا۔ خلیل قمر نے دعویٰ کیا کہ ان کے لیے خواتین محترم ہیں اور وہ ان کی بہت عزت کرتے ہیں، پروگرام میں بات کرتے ہوئے خلیل الرحمٰن قمر نے کہا کہ خواتین پر بہت ذمہ داریاں ہوتی ہیں کیونکہ جب ایک مرد گناہ کرتا ہے تو صرف ایک گھر تباہ ہوتا ہے لیکن جب عورت گناہ کرتی ہے تو پوری نسل تباہ ہو جاتی ہے۔

ارجن کپور کو ملائکہ اروڑا کی عمر سے مسئلہ کیوں نہیں

خلیل الرحمٰن قمر نے ماہرہ خان کے معاملے پر بات کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اداکارہ کو معاف کردیا ہے مگر وہ ان کے لیے پیچھے نہیں جا سکتے اور نہ ہی انہیں اپنے کسی منصوبے میں کاسٹ کرسکتے ہیں۔ خلیل نے کہا کہ ان کی موت کے بعد ہی ماہرہ کو ان کے کسی منصوبے میں کام دیا جا سکتا ہے۔

یاد رہے کہ ماہرہ خان اکیلی اداکارہ نہیں ہیں جنہوں نے خلیل الرحمٰن قمر پر ماروی سرمد کے معاملے میں تنقید کی ہو۔ ماہرہ کے علاوہ اداکارہ ریشم اور مہوش حیات بھی خلیل قمر پر تنقید کر چکی ہیں۔ خلیل قمر نے بتایا کہ مہوش حیات اچھی اداکارہ ہیں مگر اب وہ ان کے ساتھ مزید کام نہیں کر سکتے، وہ مہوش حیات کے ساتھ آخری فلم ‘لندن نہیں جاؤں گا’ کر چکے، اب وہ ان کے لیے اور نہیں لکھ سکتے۔ انکا کہنا تھا کہ دوسری اداکاراؤں کو بھی موقع ملنا چاہئے، ڈرامہ ساز نے کہا کہ میں نے مہوش حیات کے کام کا ٹھیکہ نہیں لے رکھا، ان کے لیے کوئی اور اسکرپٹ لکھے، وہ ہمایوں سعید کے لیے بھی لکھ لکھ کر تھک چکے ہیں۔

Related Articles

Back to top button