جونی ڈیپ کی بیوی امبر کو شوہر سے زیادہ جرمانہ کیوں ہوا؟

امریکی ریاست ورجینیا کی عدالت نے 2 جون کو معروف ہالی ووڈ اداکاروں جونی ڈیپ اور امبرہرڈ کی جانب سے ایک دوسرے کے خلاف دائر ہتک عزت کے کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے دونوں کو ہی قصوروار ٹھہرایا اور دونوں کو جرمانہ کیا۔ لیکن عدالتی فیصلے پر جہاں جونی ڈیپ کے مداح خوش دکھائی دیئے اور اسے اپنی جیت قرار دیا، وہیں امبر ہرڈ کے مداحوں نے بھی اس فیصلے کو اپنی جیت قرار دیا۔ عدالت نے ہتک عزت کی سماعت کے بعد کم از کم تین دن تک فیصلے پر غور کرنے کے بعد فیصلہ سنایا، جس میں دونوں پر جرمانہ عائد کیا گیا اور دونوں کے حق اور مخالفت میں بھی فیصلہ سنایا گیا۔ تاہم جونی ڈیپ کو کو ہونے والے جرمانے کی رقم امبر ہرڈ کو ہونے والے جرمانے سے بہت کم ہے اور شاید اسی لیے جونی کو فاتح تصور کیا جا رہا یے۔

اسحاق ڈار نے ARY سے دو کروڑ جرمانہ جیت کر عطیہ کردیا

یاد رہے کہ جونی ڈیپ نے مارچ 2019 میں امبر ہرڈ کے خلاف ریاست ورجینیا میں 5 کروڑ امریکی ڈالر کے ہرجانے کا کیس دائر کیا تھا، جونی ڈیپ نے اس وقت کیس دائر کیا تھا جب کہ ان کی سابق اہلیہ امبر ہرڈ نے دسمبر 2018 میں واشنگٹن پوسٹ میں لکھے گئے مضمون میں انکشاف کیا تھا کہ وہ گھریلو تشدد کا شکار رہی ہیں، تاہم سابق شوہر جونی ڈیپ کا نام نہیں لکھا تھا۔ مضمون شائع ہونے کے بعد جونی ڈیپ کو عالمی سطح پر تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور ان پر الزامات لگائے گے کہ وہ گھریلو تشدد میں ملوث رہے ہیں، جس کے بعد اداکار نے سابق بیوی پر مقدمہ دائر کیا۔ کیس دائر ہونے اور جونی ڈیپ کے وکلا کی جانب سے الزامات لگانے کی بنیاد پر اگست 2020 میں امبر ہرڈ نے بھی سابق شوہر کے خلاف ورجینیا کی فیئر فیکس کاؤنٹی میں 10 کروڑ ڈالر کا جوابی مقدمہ دائر کر دیا تھا۔ دونوں نے اپنے مقدموں میں ایک دوسرے پر تشدد کرنے، جھوٹے الزامات لگائے اور بدنام کرنے جیسے الزامات لگائے تھے، دونوں کے مقدمات پر 2019 سے ہی قانونی کارروائی جاری تھی مگر بعد ازاں کرونا کی وبا آنے کے بعد ان کا ٹرائل تاخیر کا شکار ہوا اور رواں برس اپریل میں ان کے مقدمات کا باضابطہ ٹرائل شروع ہوا۔

دونوں کے مقدمات سننے کے لیے امریکی قانونی کے تحت 7 رکنی جیوری منتخب کی گئی، جس میں خواتین کو بھی شامل کیا گیا، جیوری نے تقریبا 8 ہفتوں تک ان کے مقدمات کی سماعت کی اور اس دوران جونی ڈیپ اور امبر ہرڈ نے بھی بیانات ریکارڈ کروائے اور ان سے جرح بھی کی گئی، تمام افراد اور گواہوں کے بیانات ریکارڈ ہونے کے بعد مئی کے اختتام تک ٹرائل کی سماعتیں مکمل ہوئیں اور جیوری نے یکم جون کو فیصلہ سنایا۔

جیوری نے فیصلہ سنایا کہ دونوں شخصیات نے ایک دوسرے کی عزت اچھالی اور ایک دوسرے پر الزامات لگائے اور دونوں پر جرمانہ بھی عائد کیا کر دیا، جیوری نے دونوں کے مقدمے کا الگ الگ فیصلہ سناتے ہوئے مجموعی طور پر امبر ہرڈ کو ایک کروڑ 50 لاکھ ڈالر جبکہ جونی ڈیپ کو صرف 20 لاکھ ڈالر کا ہرجانہ ادا کرنے کا حکم دیا۔ جونی ڈیپ نے ہرجانے کے طور پر 5 کروڑ جبکہ امبر ہرڈ نے 10 کروڑ ڈالر کا مطالبہ کیا تھا مگر عدالت نے انہیں انتہائی کم ہرجانہ ادا کرنے کا حکم دیا۔ علاوہ ازیں امبر ہرڈ پر عائد کیے گئے ڈیڑھ کروڑ کے ہرجانے میں سے بھی تقریبا 15 لاکھ ڈالر کم کرکے جونی ڈیپ کو صرف ایک کروڑ 35 لاکھ ڈالر تک کی رقم ملے گی۔

سب سے اہم سوال یہ ہے کہ 5 اور 10 کروڑ کے ہرجانے کے دعوے کے باوجود جیوری نے دونوں پر کم ہرجانہ کیوں دائر کیا؟ اس کا آسان جواب یہ ہے کہ ریاست ورجینیا کے قانون کے تحت کسی کے خلاف الزامات کے مقدمات میں اتنے بھاری معاوضے کا ہرجانہ دائر نہیں کیا جا سکتا، ریاستی قانون کے تحت کسی کو بدنام کرنے کے مقدمات میں زیادہ سے زیادہ ایک کروڑ 40 لاکھ ڈالر تک کے ہرجانے کا دعویٰ دائر کیا جا سکتا ہے۔ ٹرائل میں چوںکہ جونی ڈیپ کو ہرجانے کے دعوے کی مد میں زیادہ رقم ملے گی اور ان کے خلاف امبر ہرڈ کے لگائے گئے زیادہ الزامات کو جیوری نے غلط قرار دیا، اسی وجہ سے ہی فیصلے کو ان کی جیت قرار دیا جا رہا ہے۔

Related Articles

Back to top button