فواد چودھری کو حنا ربانی کھر پر تنقید مہنگی کیسے پڑی؟

اپوزیشن کی جانب سے حکومتی وزرا پر تنقید کوئی نئی بات نہیں، لیکن سابق وزیر اطلاعات فواد چودھری کو وزیر مملکت برائے خارجہ امور حنا ربانی کھر پر تنقید مہنگی پڑ گئی،

فواد نے حنا ربانی کھر کو ’’لو آئی کیو ویمن‘‘ قرار دے دیا

جس پر سوشل میڈیا صارفین آگ بگولا ہوگئے اور فواد کی بھر پور کلاس لے ڈالی۔ حکومت کی جانب سے نئی کابینہ کے اعلان کے بعد فواد چوہدری نے ٹوئٹر پر قطری نیوز چینل ’الجزیرہ‘ کے ایک شو کا کلپ شیئر کیا اور وزیر مملکت برائے خارجہ امور حنا ربانی کھر کو ’لو آئی کیو ویمن‘ قرار دیا، لیکن اس کا کوئی خاص جواز پیش نہ کر سکے۔

یاد رہے کہ حنا ربانی کھر پی پی پی کی سابقہ حکومت میں 2011 سے 2013 تک وزیر خارجہ کے عہدے پر فائز رہی تھیں اور وہ اس وزارت پر تقرری پانے والی پہلی اور کم عمر ترین خاتون تھیں۔

فواد چوہدری نے ایک اور بونگی مارتے ہوئے حنا ربانی کھر کے مشہور ہونے کی وجہ انکے فرینچ ڈیزائنز کمپنی ’برکن‘ کے بیگز اور ’مہنگے آئی شیڈز‘ قرار دے دی، موصعف نے یہ بھی لکھا کہ انہیں اُمید ہے کہ حنا کھر کو اس کابینہ سے جلد چھٹکارا مل جائے گا، سوشل میڈیا پر کئی صارفین نے سابق وزیر اطلاعات کے الفاظ کو ’’عورت بیزاری‘‘ سے تشبیہ دی اور فواد چوہدری کو بونگی باز قرار دے دیا۔

ذکی خالد نامی صارف نے فواد چوہدری کی ٹویٹ کو ’شرمناک‘ قرار دیتے ہوئے لکھا کہ سابق وزیر اپنی ٹویٹ میں خواتین کے بجائے ’فرد‘ کا لفظ بھی استعمال کر سکتے تھے لیکن وہ ’مردانہ عدم تحفظ‘ کا شکار ہو گئے، ایکناور صارف شہریار رضوان نے فواد کو یاد دلایا کہ سابق وزیر گزرے ہوئے زمانے میں حنا ربانی کھر کو پاکستانی وزیراعظم بنتا ہوا بھی دیکھنا چاہتے تھے۔

ان کا اشارہ فواد چوہدری کی 10 سال پرانی ایک ٹویٹ کی طرف تھا جس میں موصعف نے خود حنا ربانی کھر کو وزیراعظم بنتے دیکھنے کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔ خیال رہے فواد تحریک انصاف میں شامل ہونے سے قبل پی پی پی کا بھی حصہ رہ چکے ہیں.

’دی نیوز‘ اخبار کے ایڈیٹر طلعت اسلم نے فواد چوہدری کی ٹویٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے انہیں ’عدم تحفظ کا شکار اور عورت بیزار شخص قرار دیا اور کہا کہ شاید سابق وزیر ایک خاتون کو طاقتور منصب پر دیکھنے کے بعد ’جلن‘ کا شکار ہو گئے ہیں، سلینا راشد خان نے فواد کو رگڑتے ہوئے لکھا کہ بحیثیت پی ٹی آئی کی ووٹر میں کہنا چاہوں گی کہ آپ کا تبصرہ غیرضروری اور فضول ہے۔ برائے مہربانی آپ بولنے سے پہلے تولا کریں۔

انہوں نے مذید لکھا کہ حنا ایک اچھی پروفیشنل ہیں، جن کے مشہور ہونے کی وجہ ان کی سخت محنت ہے۔ جویریہ نامی صارف نے لکھا کہ حنا ربانی نئی کابینہ میں ہونے کی مستحق واحد وزیر ہیں اور فواد انہیں لو آئی کیو کہہ رہے ہیں۔ شاید ان کا اپنا دماغ اقتدار جانے کے غم میں خراب ہو چکا ہے۔

کچھ صارفین کو یہ بھی اُمید رہی کہ شاید فواد چوہدری خود پر ہونے والی تنقید کے بعد وہ ٹویٹ ڈیلیٹ کر دیں، سیماب زہرہ نقوی نے ٹویٹ میں لکھا ’کیا فواد چوہدری نے حنا ربانی کھر کے حوالے سے اپنی ٹویٹ ڈیلیٹ کردی؟

ثمن طارق نامی صارف نے طنزاً لکھا فواد چوہدری حنا ربانی کی ساکھ پر سوال اٹھا رہے ہیں، ایسا کرنے کے لیے جھوٹا اعتماد چاہئے، یاد رہے کہ ٹویٹ میں فواد کی جانب سے جس ’برکن‘ بیگ کی بات کی گئی ہے اس کا ذکر پہلی بار 2011 میں تب سامنے آیا رھا جب حنا کھر بحیثیت وزیر خارجہ انڈیا کے دورے پر گئیں تھیں۔ انڈین میڈیا میں بھی اس وقت پاکستان اور انڈیا کے تعلقات سے زیادہ حنا ربانی کھر کے ہینڈ بیگز اور سن گلاسز پر بات ہوتی رہی تھی، انڈیا میڈیا نے انہیں ’ماڈل لائیک منسٹر‘ قرار دیا تھا۔

واضح رہے کہ وزیراعظم شہباز شریف کی 37 رکنی کابینہ میں پانچ خواتین بھی شامل ہیں، خواتین وزراء میں پیپلز پارٹی کی حنا ربانی کھر کو وزیر مملکت برائے خارجہ امور، شازیہ مری کو بینظیر انکم سپورٹ پروگرام، شیری رحمان کو موسمیاتی تبدیلی، مسلم لیگ (ن) کی مریم اورنگزیب کو وزیراطلاعات و نشریات اور عائشہ غوث پاشا کو وزیر مملکت برائے خزانہ کے قلمدان سونپے گئے ہیں۔

Latest news about Fawad Chahudry criticism on Hina video

Related Articles

Back to top button