بیوی کو حق مہر کی ادائیگی کے حوالے سے سپریم کورٹ کا بڑا فیصلہ

بیوی کو حق مہر کی ادائیگی کے حوالے سے سپریم کورٹ کا بڑا فیصلہ سامنے آگیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے ایک مقدمے کے فیصلے میں کہا ہے کہ خاتون جب بھی تقاضا کرے شوہر حق مہر کی ادائیگی کا پابند ہوگا۔ عدالت نے چھ سال تک حق مہر کی ادائیگی میں تاخیر پر شوہر کو ایک لاکھ جرمانہ اور قانونی چارہ جوئی کی ادائیگی کا حکم بھی دیا ہے۔

عدالت نے فیصلے میں لکھا ہے کہ حق مہر شرعی تقاضا ہے جس کا تحفظ ملکی قوانین میں بھی موجود ہے، حق مہر کی ادائیگی کا وقت نکاح نامہ میں مقرر نہ ہو تو بیوی کسی بھی وقت تقاضا کر سکتی ہے، موجودہ کیس میں بیوی کو حق مہر کے حصول کیلئے مقدمہ دائر کرنا پڑا جو چھ سال بعد سپریم کورٹ پہنچا، عدالتوں نے غیرضروری اپیلیں دائر کرنے پر شوہر کو جرمانہ عائد نہیں کیا۔

سپریم کورٹ نے فیصلے میں لکھا ہے کہ غیرضروری اپیلوں پر جرمانہ کیا ہوتا تو نوبت یہاں تک نہ پہنچتی، غیرضروری اپیلیں دائر کرنے سے عدالتی نظام مفلوج ہوتا جا رہا ہے، بلاوجہ کی مقدمہ بازی ختم کرنے کیلئے عدالتوں کو جرمانہ کرنے سے ہچکچانا نہیں چاہیے۔

تین صفحات پر مشتمل فیصلہ چیف جسٹس قاضی فائز عیسی نے تحریر کیا۔ سپریم کورٹ نے خالد پرویز کی اہلیہ ثمینہ کو حق مہر کی ادائیگی کے حکم

انتخابات ، بلاول نے سندھ،زرداری نے پنجاب ،بلوچستان کا محاذ سنبھال لیا

کیخلاف اپیل خارج کر دی۔

Related Articles

Back to top button